الف کہانی

داستانِ محبت — ندا ارشاد

پہلا باب ایسا لگتا تھا جیسے کسی نے اس کی روح کھینچ لی ہو۔ اس کے تاثرات خطرناک حد تک عجیب تھے۔ آنکھوں میں ایک انجانا سا خوف اور دل تو جیسے دھڑکنا ہی بھول گیا تھا۔ ''یہ… یہ جھوٹ ہے یہ سب۔ دھوکا

الف کہانی

پہلی محبت آخری بازی — شیما قاضی

پہلی محبت آخری بازی پیش لفظ سخن میں دلکشی کچھ ہے تو عجب کیا اس میں؟ خون سے ہر لفظ کو سینچیں تو کمال آتا ہے یہ کہانی تمہارے ذہن میں کیسے آئی؟ کیسے بھر دیتی ہو اتنے بڑے بڑے رجسٹرز؟ یہ اتنے سارے

الف کہانی

سوزِ دروں — سندس جبین

داستان محبت مقابلے میں شامل ''سوزِ دروں'' ایک ایسی کہانی ہے جس کو لکھنے سے پہلے کئی بار میرا قلم دماغی اور ارادی طور پر ٹوٹا پھر ہمت کرکے لکھنا شروع کردیا۔ مگر ذہن میں ہر وقت ہار جیت چلتی رہی تھی۔ شاید وجہ

الف کہانی

سبز اور سفید

سبز اور سفید فضہ خان تیسری انعام یافتہ داستان محبت     سبزو سفید پیش لفظ سبز و سفید دراصل وطن سے محبت کی کہانی ہے۔ سبز اور سفید کہانی ہے ارمش اور ارمینہ کی۔ ارمش جس کو گھر کی تلاش تھی، ارمینہ جو

داستان محبت ۲۰۱۷

تو ہی تو کا عالم

پیش لفظ ایک محبت....! محبت جس نے اپنے لیے ہمیشہ عام چہروں سے لے کر ، بہت خاص چہروں کو چنا ہے۔ ہر بار محبت کا انتخاب لاجواب رہا مگر اس بار محبت نے جس کا انتخاب کیا عام سوچ و نظر میں وہ

الف کتاب پبلیتیشنز

انگار ہستی

ریڈروم میں روشنی کا انتظام خوشبو دار موم بتیوں کے ذریعے کیا گیا تھا۔ ایک سفید موم بتی عین آئینے کے سامنے رکھ کر اس نے میک اپ کرنا شروع کیا۔ نقلی پلکیں چپکانے کے بعد اس نے مسکارے کی تہ جمائی اور ہونٹوں

الف کہانی

عشق”لا“ – فریال سید -داستانِ محبت

داستانِ محبت عشق”لا“ فریال سید  انتساب ! ہر ذی روح کی پہلی محبت کے نام بادلوں سے ا وپر ، آسمان اتنا نزدیک ہو کے بھی خاصا دور تھا۔ نیلا آسمان پوری کائنات میں خدا کی بنائی گئی ان گنت حسین نعمتوں سے بڑھ

الف کہانی

جھوک عشق – ایم رضوان ملغانی – داستانِ محبت 

داستانِ محبت  جھوک عشق ایم رضوان ملغانی یہ جھوک عشق ہے یہاں عشق کا پڑاﺅ اتنی آسانی سے نہیں ہوا۔ عشق کو بے حد تکلیف سہنی پڑی، ٹھوکریں کھانا پڑیں، رُلنا پڑا، بھٹکنا پڑا، مار پھٹکار سہنی پڑی، گالیاں سننی پڑیں، لفظوں کے نشتر

الف کہانی

امربیل — قسط نمبر ۱۲

عمر نے مقابلے کے امتحان میں کامیابی کے بعد اگلے دو سال لاہور اور اسلام آباد میں گزارے

الف کہانی

امربیل — قسط نمبر ۱

مجھے یہ کہنا ہے بعض کہانیاں لکھتے ہوئے آپ کو ایک مستقل خلش کا احساس ہوتا رہتا ہے

الف کہانی

امربیل — قسط نمبر ۴

''عمر کے بارے میں کیا بات کر رہے تھے؟'' وہ بھی کچھ فکر مند ہو گئی تھی۔ نانو

الف کہانی

امربیل — قسط نمبر ۱۱

علیزہ کچھ دیر بستر میں لیٹی رہی۔ دروازے کے باہر اب بالکل بھی آواز نہیں تھی' پھر اسے

الف کہانی

امربیل — قسط نمبر ۳

اگلے دن یونیورسٹی میں اس کا دل نہیں لگا تھا۔ گھر واپس آتے ہی وہ سیدھا کچن میں

الف کہانی

امربیل — قسط نمبر ۱۰

اس سے ہونے والی اس لمبی چوڑی گفتگو کے چوتھے دن عمر امریکہ چلا گیا۔ علیزہ نے اس

الف کہانی

عکس — قسط نمبر ۱۶ (آخری قسط)

''کیا دیکھ رہی ہیں آپ اس آئینے میں؟'' مثال نے کچھ تجسس آمیز انداز میں عکس سے پوچھا

الف کہانی

امربیل — قسط نمبر ۱۴ (آخری قسط)

''تم آخر کرنا کیا چاہتے ہو عمر؟ '' ایاز حیدر فون پر درشت لہجے میں کہہ رہے تھے۔

تھوڑا سا آسمان

تھوڑا سا آسمان — قسط نمبر ۱

آسمان وہ عروج ہے جس کو پانے کی خواہش ہمیں ہمیشہ بے تاب رکھتی ہے۔ ہم سب کبھی

الف کہانی

تھوڑا سا آسمان — قسط نمبر ۲

''برقع کے کچھ فائدے ہیں یہ مجھے آج پتا چلا ہے۔'' وہ گاڑی کی فرنٹ سیٹ پر بیٹھا

الف کہانی

تھوڑا سا آسمان — قسط نمبر ۱۱

''شہیر بس کے انتظار میں بس اسٹاپ پر کھڑا تھا۔ جب ایک سیاہ نسان یک دم اس کے

الف کہانی

تھوڑا سا آسمان — قسط نمبر ۶

''تمہارے گھر میں نے کل بھی پیغام بھیجا تھا مگر تم کل آئے ہی نہیں۔'' عبدالکریم پینٹر نے

الف کہانی

امربیل — قسط نمبر ۱۳

آرمی مانیٹرنگ کمیٹی… اب یہ کیا بکواس ہے؟'' عمر جہانگیر نے ہاتھ میں پکڑی ہوئی فائل کو میز

الف کہانی

امربیل — قسط نمبر ۸

"تمہارا جہانگیر کے ساتھ کوئی جھگڑا ہے؟" اس شام لان میں چائے پیتے ہوئے باتوں کے دوران اچانک

الف کہانی

تھوڑا سا آسمان — قسط نمبر ۹

''مبارک ہو' بیٹا ہوا ہے۔'' ڈاکٹر نے منصور علی کو اطلاع دی۔ منصور علی یک دم کھل اٹھے۔

الف کہانی

تھوڑا سا آسمان — قسط نمبر ۴

وہ شادی کے اگلے ہفتے ہارون کے ساتھ ہنی مون کے لیے انگلینڈ چلی گئی۔ وہاں آنے کی

الف کہانی

امربیل — قسط نمبر ۵

''موڈ ٹھیک ہوگیا تمہارے کزن کا؟'' شہلا نے ساتھ چلتے چلتے اچانک علیزہ سے پوچھا۔ ''ہاں۔'' وہ ہلکے

الف کہانی

امربیل — قسط نمبر ۷

''میں نے سوچا شاید تم زارا سے ملتے ہوگے۔'' علیزہ اگلی شام اپنے کمرے سے نکل کر لاؤنج

عکس

عکس — قسط نمبر ۱

وہ کھلے داخلی دروازے سے اندر جانے کے بجائے وہیں برآمدے میں ہی رک گئی تھی۔ داخلی دروازے

الف کہانی

تھوڑا سا آسمان — قسط نمبر ۱۴

منصور علی، ہارون کمال کے سامنے بیٹھا اسے گھور رہا تھا۔ ہارون ابھی کچھ دیر پہلے ہی اپنے

الف کہانی

تھوڑا سا آسمان — قسط نمبر ۸

''آپ کو وہاں نہیں جاناچاہیے تھا ممی!'' امبر نے تھکے ہوئے اندازمیں کہا۔ ''آپ کو یہ سب کچھ

الف کہانی

امربیل — قسط نمبر ۹

''ہم نے معدہ واش کر دیا ہے ۔ وہ اب ٹھیک ہے۔ دس پندرہ منٹ بعد اسے کمرے

الف کہانی

عکس — قسط نمبر ۱۲

عکس نے گاڑی سے اترتے ہوئے سر اٹھا کر اس آئینے کو دیکھا جو اس گھر کے برآمدے

الف کہانی

عکس — قسط نمبر ۴

اس نے اسٹینڈنگ مرر میں اپنے آپ کو دیکھا، اپنے خوبصورت بالوں کو دیکھا، اپنے بے حد نازک

الف کہانی

افسانہ

میرے آسماں سے ذرا پرے — مونا نقوی

''محبت کے دل میں اترنے کا کوئی خاص موسم نہیں ہوتا کہ وہ آئے اور اپنی روپہلی کرنوں سے کسی وجود کا احاطہ کر کے اسے دل کش زنجیر میں جکڑ لے ۔محبت تو کبھی

افسانہ

فوبیا — فاطمہ عبدالخالق

ایف ایم پر ایس کے کا پروگرام شروع ہونے میں ابھی پانچ منٹ باقی تھے جب وہ سارے کام ادھورے چھوڑ کر کانوں میں ہینڈ فری گھسائے اپنے کمرے میں آگئی۔ یہ تین سال سے

افسانہ

صبر بے ثمر — سحرش مصطفیٰ

حیدرآباد سے کراچی تک دو گھنٹے کا سفر اذیت ناک تھا ۔ سارے راستے موبائل کان سے لگائے میں امی کو تسلیاں دیتی رہی، لیکن حالات کی تفصیلات جان کر میری پریشانی بڑھتی جارہی تھی۔

افسانہ

مکمل آسمان — سیدہ فرحین جعفری

''ہاشم …'' اس پکار میں گہراکرب چھپا تھا۔ ''چل پتر! گھر چل۔'' شام کے سرمئی اندھیرے میں قدرے ایک پرانی قبر کے پاس بے ترتیب پڑے وجو د میں پکا ر کے باوجود حرکت نہ

افسانہ

کیمرہ فلٹرز — فریحہ واحد

''ریت زک سے سیاہ ہوتی ہے اور اعمال سے رو سیاہ یا بلند۔'' وہ اپنے اندر کی بہتی ندی کی ذرا سی بوچھاڑ اپنی بے نور آنکھوں میں لادے اس کی گود میں اپنا سر

افسانہ

اٹینڈنس — صباحت رفیق

عصر کا وقت تھا جب وہ دوستوں کے ساتھ کرکٹ کھیلنے کے لیے گھر سے نکلنے لگا ۔اُسے لان میں بیٹھکر تسبیح پڑھتے دادا ابو کی آواز سُنائی دی۔ ''اسد بیٹا ! نماز کا وقت

افسانہ

رنگ ریز — قرۃ العین خرم ہاشمی

''دنیا میں ایسا کوئی رنگ نہیں بنا ، جو شالارنگ والا کے ہاتھوں میں آکر کھلا نہ ہو ! بابو جمیل میں ایسا رنگ رنگتا ہوں کہ کپڑا خود بھی اپنی قسمت پہ نازاں ہوتا

افسانہ

خواب زادی — ابنِ عبداللہ

یہ ایک خواب زادی کی کہانی ہے۔ داستان گو نے لمبا سانس کھینچا اور پھر سامنے بیٹھی لڑکی کی بھیدوں بھری آنکھوں میں جھانکا ۔ اس نے بچپن سے ہی اپنی بڑی بڑی آنکھوں میں

افسانہ

جواز — امایہ خان

''میں بہت جلد واپس آئوں گی۔'' نہایت گرم جوشی سے الوداع کہتے ہوئے اس نے بیپ سے رخصت لی۔ اپنے ریستوران کے مالک گرومیل کو اس نے پہلے ہی مطلع کردیا تھا۔ پیزیریا انٹیکا (pizzeria

افسانہ

وہم — حنا اشرف

''مما جانی… آپ مجھ سے کتنا پیار کرتی ہیں؟'' گول مٹول سے ریان نے سکول سے واپسی پہ اپنی پیاری ماں سے پوچھا۔ اس کے اس سوال پہ مناہل کے چہرے پہ بے ساختہ مسکان

افسانہ

ہم آہنگ — حنا نرجس

خراب اور رکی ہوئی گھڑیوں سے اسے بہت وحشت ہوتی تھی. بھلا وقت بھی کبھی رکا ہے؟ رکی ہوئی گھڑی سے بڑا دھوکا کوئی اور نہیں. پچھلے دو ہفتوں سے اس کے کمرے کی گھڑی

افسانہ

ایک اور منظر — فیض محمد شیخ

کئی دن بعد آج موسم کافی خوشگوار تھا… آسمان سرمئی بادلوں سے ڈھکا ہوا تھا… میں گھر میں بیٹھے بیٹھے اکتا سا گیا تو سوچا آج کچھ باہر کی سیر ہوجائے … تازہ دم ہو

افسانہ

صلیب — ثمینہ طاہر بٹ

بعض اوقات انسان جو سوچتا ہے، جو کرنا چاہتا ہے وہ کر نہیں پاتا۔ کبھی زمانے کی زبانیں راہ کی رکاوٹ بن جاتی ہیں، تو کبھی ذات برادری کے خود ساختہ، بے بنیاد اور کھوکھلے

افسانہ

سلامی — امینہ خان سعد

میری خالہ جب بھی ہمارے گھر آتیں تو اپنے سسرال کے قصے ضرور چھیڑتیں۔ ویسے تو وہ شادی کے چھے سال بعد ہی سسرال سے الگ ہوگئی تھیں اور اس بات کو بھی اب انیس

افسانہ

صاحبِ حال — بلال شیخ

مقدرر سب کی زندگی میں ایک دفعہ سے زیادہ اس کا دروازہ کھٹکاتا ہے اور بار بار اس کو کام یابی کی طرف بلاتا ہے مقدر نے کبھی انکار نہیں کیا کبھی منہ نہیں پھیرا

افسانہ

مصطفیٰ — اُمِّ زینب

مجھے اپنی ایک بات جو سب سے زیادہ اچھی لگتی ہے و ہ یہ کہ میں اپنی لاکھ مصروفیات کے باوجود اپنا تعلق اللہ تعالیٰ سے ضرور جوڑے رکھتی ہوں بلکہ یہاں یہ کہنا مناسب

افسانہ

موسمِ گُل — عاصمہ عزیز

خوب صورت شاہ ولا جس کی پیشانی پر ماشا اﷲ کی تختی سجی تھی، میں اس وقت گہرا سکوت چھایا ہوا تھا۔ شان دار فرنیچر سے مزّین شاہ ولا کے ڈائننگ روم میں اس وقت

الف کہانی

میں، محرم، مجرم — افراز جبین

اس نے لرزتے ہاتھوں سے ICU کا دروازہ کھولا۔ اس کا اکلوتا بیٹا، اس کے بڑھاپے کا سہارا آکسیجن ماسک، نالیوں اور ڈرپس میں لپٹا ہوا تھا۔ اس کے لبوں پر شکوہ نہیں بلکہ آنکھوں

افسانہ

کباڑ — صوفیہ کاشف

سعدیہ نے صفائی والا کپڑا اٹھایا اور مسہری کو دھیرے سے جھاڑنے لگی۔ رات پھر اس کے خواب میں ایک چہرا اترا تھا۔ ایک ایسا مبہم چہرا جِسے وہ زندگی میں بہت پیچھے چھوڑ آئی

افسانہ

جب زمین تنگ ہوجائے — حنا نرجس

تقریباً تین ماہ گزر چکے تھے لیکن ابھی تک لاشعوری طور پر میری نگاہیں دائیں جانب ہل ہل کر قرآن پڑھتے بچوں میں سے قطار کے اختتام پر اس خوف زدہ چہرے کو تلاش کرنے

افسانہ

ہم نفس — شہرین اشرف

مجھے آج تک ایک بات کی سمجھ نہیں آئی کہ جب تک انسان کو اس کا پیار نہیں ملتا تو وہ یہ کیوں کہتا ہے کہ جان ہے تو جہاں ہے ورنہ سب بیکار ہے۔

افسانہ

حوّا کی بیٹی — سارہ عمر

''بس یہیں روک دیں۔'' وہ ڈرائیور کے پیچھے سے بولی تھی۔ پرس سنبھالتی وہ اپنے اسٹاپ پر اتر گئی۔ ایک لمحے کے لیے نظر سڑک کے پار اُٹھی اور پلٹ کر واپس آنا بھول گئی۔

افسانہ

بارش کب ہوگی — مریم جہانگیر

بارش کب ہو گی؟ " عمیر نے زبیر کا ہاتھ پکڑتے ہوئے کہا۔ "اگر میں ہوا کی رتھ پہ سوار ہو سکتا تو اس پہ بیٹھ کر دور آسمانوں میں چلا جاتا اور آسمان پہ

افسانہ

دوسراہٹ — لبنیٰ طاہر

دیوار پر جھولتی ، بہار دکھاتی پھولوں کی بیل دل موہ رہی تھی ۔ اس سے پرے کھڑکی کی آ ہنی جالی کے نقش و نگار مجھے تقریباًحفظ ہو چکے تھے ۔اس پہ ٹنگا خوب

افسانہ

بس کا دروازہ — نوید اکبر

جون کی گرمی۔۔۔ دوزخ کی گرمی۔۔۔لاہور شہر اور اُنتالیس نمبر بس۔یہ بس ائیر پورٹ سے شیرا کوٹ تک جاتی تھی، نہ جانے کتنی خاک، کتنے تنکے راستے میں بکھراتے ہوئے۔ اس کے راستے میں کینٹ

الف کہانی

پہلی محبت آخری بازی — شیما قاضی

پہلی محبت آخری بازی پیش لفظ سخن میں دلکشی کچھ ہے تو عجب کیا اس میں؟ خون سے ہر لفظ کو سینچیں تو کمال آتا ہے یہ کہانی تمہارے ذہن میں کیسے آئی؟ کیسے بھر

الف کہانی

چائے والا — ایم رضوان ملغانی

دِن بھر کی تھکن اور مشقت نے اس کے پورے وجود کو ڈھانپا ہوا تھا۔ اسے ہلکا ہلکا بخار بھی تھا، اس کے باوجود بھی اس نے آج ناغہ نہیں کیا تھا۔ وہ سارا دن

افسانہ

درخت اور آدمی — محمد جمیل اختر

درخت کے سائے میں بیٹھے بیٹھے ایک دن وہ اُکتا گیا، یہ دنیا اتنی بڑی ہے میں کب تک یہاں پڑا رہوں گامجھے ضرور یہاں سے جانا ہوگا۔ ''میں یہاں سے جارہاہوں '' ایک دن

افسانہ

ارمان رہ گئے — حمیرا نوشین

''لِکھ خالہ حبیبن مع اہل و عیال'' اماں نے عینک درست کرتے ہوئے معمر کو کارڈز لکھوانے شروع کئے ''لکھ دیا اماں'' اُس نے لکھا ہوا کارڈ ایک سائیڈ پہ رکھا اور دوسرا کارڈ یہ

افسانہ

لال کتاب — حنا یاسمین

اس کچے سے صحن میں شام اُتر رہی تھی۔ ہوا نے چلنے سے انکار کر دیا اور بڑھتی حبس نے سینوں کے اندر دھڑکتے دل پژمردہ کر دیئے تھے۔ وہ خاندانی گویئے تھے۔ سال ہا

افسانہ

شکستہ خواب — فرحین خالد

زندگی اگر بے کیف ہو تو اس میں آنے والا بدلاؤ، بھی کوئی معنی نہیں رکھتا ہے اور نہ ہی مزاج میں ارتعاش پیدا کرتا ہے۔ ایسے میں انسان روبوٹ بنا اپنے ریموٹ کے بٹن

الف کہانی

سوزِ دروں — سندس جبین

داستان محبت مقابلے میں شامل ''سوزِ دروں'' ایک ایسی کہانی ہے جس کو لکھنے سے پہلے کئی بار میرا قلم دماغی اور ارادی طور پر ٹوٹا پھر ہمت کرکے لکھنا شروع کردیا۔ مگر ذہن میں

افسانہ

مجھے فخر ہے — آمنہ شفیق

''مجھ سے تو نہیں بولی جاتی اتنی اُردو۔ اُف! عجیب سی ہے یہ زبان۔ اردو لکھنا اور پڑھنا تو عذاب ہے۔'' وہ روانی سے انگریزی میں کہتی ہوئی اکتائی سی لگ رہی تھی۔ "It's so

افسانہ

اُوپر حلوائی کی دکان — علینہ معین

''اماں! کدھر ہو؟'' ''اماں جلدی آئو''۔ شبانہ بلند آواز میں پکار رہی تھی۔ ایک تو صبح سویرے خالہ شیداں کا فون اس کی سپنوں بھری نیند میں خلل ڈال گیا اوپر سے شادی کا بلاوا۔

الف کہانی

لاکھ — عنیقہ محمد بیگ

وہ ایک ایسا ٹی وی شو دیکھ رہا تھا جس میں ایک غریب آدمی کی گاڑی نکل آئی۔ وہ آدمی خوشی سے رونے لگا… اینکر نے محبت کے ساتھ اُسے گلے سے لگایا… اُس نے

الف نگر

الف نگر

برسات

برسات اسماعیل میرٹھی وہ دیکھو اُٹھی کالی کالی گھٹا ہے چاروں طرف چھانے والی گھٹا گھٹا کے جو آنے کی آہٹ ہُوئی ہوا میں بھی

الف نگر

چلتا جا تُو الف نگر میں!

چلتا جا تُو الف نگر میں! ضیاء اللہ محسن چاند چکوری ہوتا بھیّا تارے ہوتے گول سورج چاچو لمبے ہوتے کھمبے گول مٹول چُوں چُوں

الف نگر

میں نے پالے طوطے چار

میں نے پالے طوطے چار ارسلان اللہ خان میں نے پالے طوطے چار جن سے کرتا ہوں میں پیار پانی پیتے ہیں یہ خوب کھانا

الف نگر

دادی جان نے دال پکائی

نویں انعام یافتہ نظم دادی جان نے دال پکائی سارہ قیوم دادی جان نے دال پکائی امی، ابو، آپا، بھائی ناک بھوں سب نے چڑھائی

الف نگر

ہڑپہ اور موہنجو دڑو کی کہانی

ہڑپہ اور موہنجو دڑو کی کہانی کہانی بڑی پرانی! سمیع اللہ حامد۔ بحرین اِدھر آؤ بچو! کہانی سنو! کہانی ہماری زبانی سنو! کہانی یہ ماضی

الف نگر

آؤ چلتے ہیں لاہور

آؤ چلتے ہیں لاہور ارسلان اللہ خان کیوں ہوتے ہو اتنے بور آؤ چلتے ہیں لاہور دیکھو داتا کا دربار گھومو باغِ شالیمار ماڈل ٹاؤن،

الف نگر

میٹھے بول

میٹھے بول ضیاء اللہ محسن جب بھی بچو بولو تم لب اپنے جب کھولو تم لہجہ ایسا، من کو بھائے اور باتوں سے خوشبو آئے

الف نگر

مالک اور نوکر

مالک اور نوکر ارسلا ن اللہ خان اک مالک نے رکھا نوکر دیر سے اُٹھتا تھا وہ سو کر جو چیزیں مالک منگواتا نوکر کچھ

الف نگر

محمدۖ کے جیسا نہیں کوئی بھی

محمدۖ کے جیسا نہیں کوئی بھی محمد ارسلان اللہ خان نہیں بعد اُن ۖ کے کوئی بھی نبی یہ امُّت بھی ہے امُّتِ آخری جو

الف نگر

کریلا

الف نگر مقابلہ کی چوتھی بہترین نظم کریلا ناہید حیات میں ہوں سبزی، نام کریلا جو بھی کھائے کرے واویلا کڑوا ہوں اور نیم چڑھا

نان فکشن گفتگو فکشن سکرین پلے سکرپٹ رائٹنگ

مجوزہ تحاریر

شاعری

شاعری

جو ہم پہ گزرے تھے رنج سارے جو خود پہ گزرے تو لوگ۔ احمد سلمان

 جو ہم پہ گزرے تھے رنج سارے جو خود پہ گزرے تو لوگ۔ احمد سلمان جو ہم پہ گزرے تھے رنج سارے جو خود پہ

شاعری

اے محبت ترے انجام پہ رونا آیا – شکیل بدایونی

اے محبت ترے انجام پہ رونا آیا - شکیل بدایونی اے محبت ترے انجام پہ رونا آیا جانے کیوں آج ترے نام پہ رونا آیا

شاعری

چکلے – ساحر لدھیانوی

چکلے ساحر لدھیانوی     یہ کوچے یہ نیلام گھر دل کشی کے یہ لٹتے ہوئے کارواں زندگی کے کہاں ہیں کہاں ہیں محافظ خودی

شاعری

گلوں میں رنگ بھرے باد نوبہار چلے – فیض احمد فیض ۔ شاعری

گلوں میں رنگ بھرے باد نوبہار چلے - فیض احمد فیض گلوں میں رنگ بھرے باد نوبہار چلے چلے بھی آؤ کہ گلشن کا کاروبار

شاعری

اب کے ہم بچھڑے تو شاید کبھی خوابوں میں ملیں ۔ احمد فراز ۔ شاعری

اب کے ہم بچھڑے تو شاید کبھی خوابوں میں ملیں ۔ احمد فراز اب کے ہم بچھڑے تو شاید کبھی خوابوں میں ملیںجس طرح سوکھے

شاعری

پورا دکھ اور آدھا چاند ۔ پروین شاکر ۔ شاعری

پورا دکھ اور آدھا چاند ۔ پروین شاکر پورا دکھ اور آدھا چاند ہجر کی شب اور ایسا چاند دن میں وحشت بہل گئی رات

شاعری

گئے موسم میں جو کھلتے تھے گلابوں کی طرح ۔ پروین شاکر ۔ شاعری

گئے موسم میں جو کھلتے تھے گلابوں کی طرح ۔ پروین شاکر گئے موسم میں جو کھلتے تھے گلابوں کی طرح دل پہ اتریں گے

شاعری

محمد (صلی اللہ علیہ وسلم)

محمد (صلی اللہ علیہ وسلم) خرم فاروق ضیا محبت کے دریا بہاتے محمد ہر اِک شخص کے کام آتے محمد امیروں سے ملتے، غریبوں سے

شاعری

بال کی کھال

بال کی کھال غلام رسول زاہد شیخ کریم کا شادی ہال شادی ہال میں شیخ اقبال شیخ اقبال کے ہاتھ میں تھال تھال کے اوپر

نظم

مالک اور نوکر

مالک اور نوکر ارسلا ن اللہ خان اک مالک نے رکھا نوکر دیر سے اُٹھتا تھا وہ سو کر جو چیزیں مالک منگواتا نوکر کچھ

شاہکار سے پہلے

انہیں ہم یاد کرتے ہیں

error: Content is protected !!