آزادی کی نعمت

آزادی کی نعمت
عظمیٰ رحمان ہاشمی

آزادی کا جشن مناتے رہنا ہے
گیت سدا خوشیوں کے گاتے رہنا ہے

لاکھوں جانیں دے کر جس کو پایا تھا
اس گلشن کو خوب سجاتے رہنا ہے

اس کی خاطر کتنے درد اٹھائے تھے
اب خوشیوں کے پھول بچھاتے رہنا ہے

دشمن پر ہیبت ہو جائے گی طاری
آزادی کے گیت سناتے رہنا ہے

دیس کی عزت اپنی جان سے پیاری ہے
ہر پل اس کی شان بڑھاتے رہنا ہے

آزادی کی نعمت کے شکرانے میں
الفت کے اب دیپ جلاتے رہنا ہے

پاک وطن کی خاطر جینا مرنا ہے
دیس پہ امبر جان لٹاتے رہنا ہے

٭…٭…٭

 112 views

Read Previous

بلّی اور پرندہ

Read Next

جتن کیا تو…!

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

error: Content is protected !!