بھوک – سو لفظی کہانی

سو لفظی کہانی

بھوک

سیدہ رابعہ غرشین

ماہا کے پیٹ میں روز درد رہتا تھا۔ ٹیچر دوائی دے کر ڈاکٹر کے پاس جانے کی تلقین کرتی… مگر اگلے دن پھر وہ درد سے رو رہی ہوتی…

آج میں نے اسے اپنے ساتھ لنچ کرنے کی پیشکش کی۔

امی کے ہاتھ کا بل والا پراٹھا دیکھ کر اس کی آنکھیں چمک اٹھیں، مگر اپنا بھرم قائم رکھنے کے لیے کھانے سے انکار کردیا۔

بہت اصرار کرکے میں اسے کھانے پر راضی کیا۔

معمول سے ہٹ کر ایک کام ہوا تھا آج… اس کے پیٹ میں درد نہیں ہوا۔

تب مجھے پتا چلا یہ درد پیٹ کا نہیں بھوک کا درد تھا۔

٭…٭…٭

 

admin

Read Previous

بدگمانی ۔ سو لفظی کہانیاں

Read Next

چھوٹا کون؟ – سو لفظی کہانی

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

error: Content is protected !!