ایڈوانس بکنگ – سو لفظی کہانی

سو لفظی کہانی

ایڈوانس بکنگ

محمد فیصل علی

 

”میں نے کار روکی، بزرگ شکریہ ادا کر کے بیٹھ گئے۔

”آپ کا تعارف؟”

”ریٹائرڈ فوجی ہوں، ایک سیٹھ کے ہاں کام کرتا ہوں،

ادھر ”بچوں” کو عید ملنے آیا ہوں۔”

”ایڈریس بتائیں؟” میں گھر تک چھوڑ دیتا ہوں۔

انہوں نے پتہ بتایا… کار ایک بڑی کوٹھی کے سامنے جا رکی۔

مجھے پانی پلانے کے لیے روکا گیا۔ کچھ دیر بعد ایک نوجوان فون پر بات کرتے ہوئے نمودار ہوئے:

”ابا جی آئے ہوئے ہیں، عید کے بعد رش بہت ہوتا ہے نا… ان کی ٹکٹ ایڈوانس بک کر لیں… ہاں ہاں عید کے دوسرے روز صبح آٹھ بجے کی، اوکے۔”

٭…٭…٭

 

admin

Read Previous

اَب سمجھا امی! ۔ سو لفظی کہانی

Read Next

آہ – سو لفظی کہانی

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

error: Content is protected !!