اَب سمجھا امی! ۔ سو لفظی کہانی

سو لفظی کہانی

اَب سمجھا امی!

ابن آس محمد

نو بھائی تھے ہم… ایک بہن… ابو مزدور… جتنا کماتے کم پڑتا۔

امی پڑھی لکھی تھیں نہ ابو… مگر ہمیں پڑھاتے تھے۔

اچھے کپڑے نہ ابو پہنتے نہ امی… ہمیں پہناتے تھے۔

نہ عید مناتے… نہ بقر عید… ہماری عید بنا دیتے۔

جیسے تیسے کرکے… رات کو ایک ہنڈیا پکتی… ہم مزے سے کھاتے…

اور امی… بچی ہوئی روٹی دیگچی میں لگا لگا کر کھاتیں۔ کبھی اُن کی یہ حرکت سمجھ میں نہیں آئی۔

پھر ایک رات… بے روزگاری کے دِنوں میں۔

اپنی پڑھی لکھی بیوی کو دیگچی میں کھاتے دیکھا۔

سب سمجھ گیا… اور رو پڑا۔ شکریہ امی…!!!

٭…٭…٭

admin

Read Previous

اُلّو اور پینگوئن ۔ بچوں کی کہانیاں

Read Next

ایڈوانس بکنگ – سو لفظی کہانی

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

error: Content is protected !!