صبح سویرے آئے چڑیا

صبح سویرے آئے چڑیا

محمد اکرام انجم میواتی

صبح سویرے آئے چڑیا

آکے شور مچائے چڑیا

چُو چُو چوں، چُو چُو چوں

سوتے بچے جگائے چڑیا

منہ جو کھولے اللہ بولے

گُن خدا کے گائے چڑیا

جلدی اُٹھ کے باہر جاکے

دن میں راحت پائے چڑیا

دانہ دانہ ڈھونڈے کھانا

دانہ دُنکا کھائے چڑیا

تنکے جوڑے اُلٹے موڑے

اپنا گھر بنائے چڑیا

محنت کرتی دامن بھرتی

سب کے من کو بھائے چڑیا

صبح سویرے آئے چڑیا

آکے شور مچائے چڑیا

٭…٭…٭

admin

Read Previous

محمد (صلی اللہ علیہ وسلم) ۔ نعت

Read Next

گھر سے مکان تک ۔ افسانہ

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے